بچے ہمارے عہد کے
Lubna Mirza نے Wednesday، 29 April 2015 کو شائع کیا.

میری بیٹی کو کومان میں گرمیوں کی چھٹیوں میں پڑھانے کی جاب مل رہی ہے۔ اور میرے بیٹے کو بھی اپنے ماموں سے   انٹرنیٹ  پر سیلز میں جاب مل رہی ہے۔ وہ ہسپتال میں ٹین ہیرو والنٹیر بھی ہوگا۔ وہ دونوں 14 اور 15 سال کے ہیں۔ ایک طرف میں خوش ہوں کہ ان کو کچھ تجربہ ہوگا کہ کیسے کام کرکے پیسے کمائے جاتے ہیں اس سے ان میں احساس ذمہ داری بڑھے گی۔ بیٹے کو اچھی طرح گاڑی چلانی بھی سکھا دی ہے۔ اب بیٹی کو سکھا رہی ہوں۔ کل اس نے چلائی سیدھی روڈ پر اور بالکل ٹھیک پارک بھی کردی۔ دوسری طرف مجھے تھوڑی سی فکر بھی ہوتی ہے۔ امریکی بہت سے بچے جب جاب کرنے لگتے ہیں تو انہیں پتہ چلتا ہے کہ ان پیسوں سے آپ ایک اپارٹمنٹ کا کرایہ بھی دے سکتے ہیں اور ایک چھوٹی موٹی گاڑی بھی لے سکتے ہیں۔ ایسے کئی بچے پڑھائی سے بھاگ جاتے ہیں کیونکہ کالج تو جان جوکھوں کا کام ہے۔میں غلطی سے  یونیورسٹی کی لائبریری میں  کمپیوٹر کا چارجر بھول آئی تھی۔ پھر میں نے دونوں بچوں سے کہا کہ آپ لوگ میرے ساتھ چلو تو چارجر واپس لاتے ہیں۔  یونیورسٹی بہت خوبصورت ہے۔ بہت پرانی اور اونچی عمارت ہے لائبریری کی ، یونیورسٹی کے چھوٹے سے اپنے شہر کے اندر، جس کی دیواروں کو پودوں کی بیلوں نے لپیٹا ہوا ہے۔ اس کے باہر  فوارے بنے ہوئے ہیں جہاں پانی گرنے کی آواز بھلی لگتی ہیں۔یہ شہر میرا جانا پہچانا ہے۔ سارے راستے ناپے ہوئے ہیں وقت خرچ کرکے۔  ان راستوں سے بہت سارے ڈاکٹر، سائنسدان  اور مفکر گذرے ہیں۔ ڈاکٹر ٹرنر  جنہوں نے ٹرنر سنڈروم  دریافت کیا تھا اور ڈاکٹر کیم  جو میرے  مینٹور تھے۔ انہوں نے  پرائمری الڈاسٹیرون  کو تشخیص کرنے کے لئیے کیپٹوپرل  ٹیسٹ ایجاد کیا جو آج ساری دنیا میں  گولڈ اسٹینڈرڈ سمجھا جاتا ہے۔ لائبریری میں ہم لوگ  اوکلاہوما کے ریڈ انڈین  مجسموں اور ان کے پرانے  علاج کرنے کے طریقوں کی  تصویروں کے پاس سے گذرے، دیواروں پر  گذری ہوئی صدیوں میں  پہننے والے  ڈاکٹر ز کے ملبوسات،  پرانے زمانے کے آلات اور دیواروں پر ان لوگوں کی تصویریں لٹکی ہوئی تھیں جنہوں نے یونیورسٹی بنانے کے لئیے پیسے اور اپنی  جائداد دی تھی۔ یہ عظیم لوگ اب دنیا سے جا چکے ہیں سوائے ڈاکٹر کیم کے ، وہ ابھی حیات ہیں۔  جب ہم واپس آنے لگے تو میری بیٹی کہتی ہے ، کتنی پریٹی  یونیورسٹی ہے یہ ، ہم بھی یہاں پڑھنے آئیں گے۔  یہ سن کر میرا دل خوش ہوگیا لیکن ظاہر ہے کہ وہ میں نے بالکل ظاہر نہیں کیا۔ اگر آپ کے ٹین ایج بچے ہیں تو آپ کو پتا ہی ہوگا کہ وہ ہر اس چیز کا الٹا کریں گے جو آپ ان سے کہیں۔صرف  یہ کہا کہ جب باہر برف گری ہو تو آپ لوگ اس بلڈنگ سے لائبریری  میں  انڈر گراؤنڈ راستے سے جاسکتے ہیں کیونکہ ان کے بیچ میں زمین کے نیچے سے راستہ ہے۔

http://www.oumedicine.com/?gclid=CJ6o-8f3nMUCFQqGaQodZhAAEg

 

(ل م – ایم ڈی)


ٹیگز:-
وقت ہمیشہ ایک سا نہیں‌رہتا
Lubna Mirza نے Tuesday، 7 April 2015 کو شائع کیا.

کبھی کبھار آپ کسی سے ایسی بات سنتے ہیں‌جو سالوں تک یاد رہ جاتی ہے۔ ایک مرتبہ وی اے ہسپتال میں‌جب میں‌ اینڈوکرائن میں فیلوشپ کررہی تھی تو ایک خاتون کو دیکھا، وہ تھائرائڈ کے ٹیومر کی بایوپسی کروانے آئی تھیں۔ کہنے لگیں‌کہ جیسے جیسے انسان کی عمر زیادہ ہوتی جاتی ہے تو زندگی ہمیں‌ […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
لڈو کی کہانی سب عمروں کے بچوں کے لئیے
Lubna Mirza نے Sunday، 16 November 2014 کو شائع کیا.

بہت دن پرانی بات ہے کہ ایک شہر میں ایک لڑکا رہتا تھا جس کا نام تھا نوید۔ نوید کی ایک بہن تھی اور وہ اپنے امی ابو اور دادی کے ساتھ رہتے تھے۔ ان کی دادی شہر سے باہر گئی ہوئیں تھیں۔ ایک دن کیا ہوا کہ نوید چھٹی کے دن  اپنے ایک دوست […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
دل کے بہلانے کو
Lubna Mirza نے Thursday، 16 October 2014 کو شائع کیا.

“ایک مرتبہ ایک خاتون واپس آئیں تو میں نے پوچھا آپ نے دوا لینا شروع کی اور وہ کیسی چل رہی ہے؟ تو انہوں‌نے کہا نہیں میں‌نے وہ دوا نہیں‌لی بلکہ یہ والی لے رہی ہوں۔ انہوں‌نے دو بوتلیں اپنے بڑے سے بیگ میں‌سے نکال کر دکھائیں۔ ان پر چائنیز میں‌کچھ لکھا ہوا تھا۔ میں‌نے […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
ڈاکٹر رضوی کی کہانی
Lubna Mirza نے Saturday، 20 September 2014 کو شائع کیا.

یہ ایک عظیم انسان کی کہانی ہے جنہوں‌نے مشکلات کا سامنا کیا اور اپنی تعلیم اور طاقت کو مثبت سمت میں‌استعمال کیا۔ یہ تمام باتیں‌ہر انسان اپنے دل میں‌ضرور سوچتا ہے۔ جب میں‌نے اور نذیر نے ایم بی بی ایس کمپلیٹ کیا تو ہم نے ہر جگہ جاب کے لئیے دیکھا۔ کراچی میں‌چانڈکا سے پڑھے […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
ایک ہفتہ چھٹی کے بعد
Lubna Mirza نے Tuesday، 9 September 2014 کو شائع کیا.
پہلے عقل اور پھر یقین !
Lubna Mirza نے Sunday، 29 June 2014 کو شائع کیا.
Hidden Agendas?
Lubna Mirza نے Friday، 27 June 2014 کو شائع کیا.
Diabetes education website
Lubna Mirza نے Tuesday، 24 June 2014 کو شائع کیا.
Lesson for today
Lubna Mirza نے Wednesday، 4 June 2014 کو شائع کیا.